Home / خبریں / نقیب اللہ مسعود اور بختاور بھٹو کا آپس میں کیا تعلق تھا حیران کن انکشاف۔۔۔

نقیب اللہ مسعود اور بختاور بھٹو کا آپس میں کیا تعلق تھا حیران کن انکشاف۔۔۔

نقیب اللہ مسعود اور بختاور بھٹو کا آپس میں کیا تعلق تھا حیران کن انکشاف۔۔۔
13 جنوری کو ملیر کے علاقے میں آپریشن ہوااور اس آپریشن کے بعد پولیس نے اپنی رپورٹ جاری کی۔ملیر میں کیے جانے والے آپریشن میں بہت سے دہشت گردوں کو ہلاک کیا گیا تھا،آپریشن ایس ایس پی خلیل راو انوار کی نگرانی میں کیا گیا تھااس کے بعد سوشل میڈیا پر ہلچل مچ گئی اور ایک بات سامنے آئی کہ اور چار دہشت گردوں میں ایک نقیب محسود ہے جس کا دہشت گردوں سے کوئی تعلق نہیں ہے بلکہ کراچی کے علاقے سہراب کوٹ کا رہاشی ہے جو کہ کچھ عرصہ سےوزیرستان سے کراچی رہائیش پزیر ہوا تھا اس خبر کے بعد راو انوار نے اپنی رپورٹ فوری پیش کی اور اس رپورٹ کے مطابق نقیب مسعود وزیرستان میں پیدا ہوا۔
اس نے اپنی ابتدائی تعلیم بہادر خیل کے ایک مدرسہ سے حاصل کی ذرائع نے یہ دعوی کیا کہ نقیب مسعود ایک عام شہری اور تین بچوں کا باپ ہے۔سوشل میڈیا پر دی جانے والی تصویر میں ایک تصویر میں نقیب اللہ اپنے بیٹے کو آرمی میں کپٹن بنانے کی خواہش کا اظہار کر رہا ہے ۔


نقیب اللہ محسود کے خلاف کی جانے والی تفتیش آخری مراحل میں ہے نقیب اللہ محسود 2008 میں کیے جانے والے آپریشن کی وجہ سے اپنے بچوں کے بہتر مستقبل کے لیے کراچی آیا،نقیب اللہ کے دوستوں کے مطابق اس کو ماڈلنگ کا بہت شوق تھا۔اس لیے وہ سوشل میڈیا پر اپنی تصویریں اپ لوڈ کرتا رہتا تھا،یہ ایک ایسا سٹار ہے جس کو اپنا خود بہت اچھا لگتا ہے اس کے خوابوں میں تھا کہ وہ خودکو سنوار کر رکھے۔دوستوں کے ساتھ نہایت خوش اسلوبی سے پیش آتا تھا اور اس کی نقل و حمل بھی بہت اچھی تھی۔

سوشل میڈیا پر کرکٹ سے زیادہ نیلم منیر کے چرچے

راو انوار یہ توقع کر رہا ہے کہ یہ معاملہ بھی دوسرے معاملات کی طرح دب جائے گا اس کا خیال تھا کہ تھوڑا احتجاج ہو گا تھوڑی سی مزمت ہو گی اور پھر کوئی نہیں پوچھے گا لیکن سوشل میڈیا پر نقیب کی تصوریریں یہ چیخ چیخ کر کہ رہی ہیں کہ وہ بے گناہ ہے۔نقیب اللہ کے کیس میں بنائی جانے والی تین رکنی کمیٹی نے نقیب اللہ مسعود کو بے گناہ ثابت کر دیا ہے،بالکل واضع انداز کہا گیا ہے جعلی پولیس مقابلے میں مارا جانے والا نقیب اللہ ایک سچا اور پکا پاکستانی ہے۔
راو انوار کے پاکستان پیپل پارٹی سے انتہائی قریبی تعلقات تھے اس لیے وہ گریڈ 18 پر ہونے کے باوجود گریڈ 19 پر فرائض سر انجام دے رہے تھےپہاڑ کے دامن میں رہنے والا نقیب اور فیس بک کا ہیرو رائو انوار کے جعلی پولیس مقابلے کا شکار ہو گیا۔
اس خبر کا سب سے اہم پہلو یہ ہے کہ آصف علی زرداری کی صاحبزادی بختاور بھٹو نقیب اللہ محسود کو پسند کرتی تھی اور اس سے شادی کرنا چاہتی تھی جس کی وجہ سے پیپل پارٹی نقیب اللہ محسود کو راستے سے ہٹانے کےلیے راو انوار کا استعمال کیا اب سوشل میڈیا پر یہ خبر ہے کہ پیپل پارٹی نے راو انوارکو دبئی بھجوا دیا ہےتاکہ نقیب کے کیس میں پکڑے جانے پر سزا سے بچا جا سکے

Check Also

Federal budget 2018-19 to be presented today

مالی سال 19-2018 کا وفاقی بجٹ آج پیش کیا جائے گا

مالی سال 19-2018 کا وفاقی بجٹ آج پیش کیا جائے گا Govt to present 2018-19 …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: